عبادات - زکاة و صدقات

India

سوال # 176210

میں( بنت مشتاق، عمر 40 سال غیرشادی شدہ) 5.061 تولہ سونا اور 4.468 تولہ چاندی اور11154 روپے کی مالک ہوں. 4.304 تولہ سونا اور4.468 تولہ چاندی میرے پاس 20 سال سے ہے ، اور روپئے اس سال جمع ہوئے ہیں، اس مال پر زکوٰة کتنی اور کتنے سال کی دینی ہو گی؟

Published on: Feb 16, 2020

جواب # 176210

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:445-354/sd=6/1441



جب سے آپ صاحب نصاب ہیں، اس وقت سے حساب لگاکر ہر سال کی زکات نکالنا آپ پر واجب ہے، سونے اور چاندی کو ملا کر جو مجموعی قیمت بنتی ہے اس کا ڈھائی فیصد ایک سال کی زکاة میں ادا کرنا ہوگا، اس طرح آپ بیس سال کا حساب لگا لیں ؛ البتہ اِس کا لحاظ رکھیں کہ پہلے سال زکات کی جتنی رقم نکالنا واجب تھی، دوسرے سال کی زکاة کا حساب لگاتے ہوئے کل مالیت میں سے اُتنی رقم منہا کی جائے گی، اسی طرح تیسرے سال کی زکاة کا حساب لگاتے ہوئے کل مالیت میں سے پہلے اور دوسرے سال میں واجب شدہ زکات کی رقم منہا کی جائے گی، اس طرح بیس سال کا حساب لگائیں اور فی الحال آپ کے پاس جو نقدی رقم ہے، اِمسال کے زکات کے حساب میں یہ رقم بھی شامل کی جائے گی اور رقم کی بھی زکات نکالنی ہوگی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات