India

سوال # 177206

سر میرا یہ سوال کہ شوہر اور بیوی میں ہمبستری ہو جائے ایسی حا لت میں كہ بیوی کو تین دن پہلے حیض آیا اور اس کے بعد بیوی نے بتایا کہ اس نے غسل کیا اور وہ چوتھے دن پاک اور اب حیض نہیں ہے لیکن ہمبستری کے بعد شوہر کے عضو پر خون لگا دیکھا تو یہ گناہ تو نہیں ہوا کیوں کے بیوی کے مطابق اس دن اس کا حیض کا وقت تیسرے دن ختم ہو جا تا برائے مہربانی آئند کے لیے رہنمائی فرمائیں۔

Published on: Mar 19, 2020

جواب # 177206

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 620-518/D=07/1441



چونکہ صورت مسئولہ میں عورت کی عادت تین دن خون آنے کی تھی، اس کے بعد اس نے غسل بھی کیا، چوتھے دن آپ نے صحبت کی تو کوئی گناہ ان شاء اللہ نہیں ہوا؛ لیکن اب چوتھے دن بھی بیوی کو خون آگیا ہے تو یہ مانا جائے گا کہ اس کی عادت بدل گئی، اس لیے اگلے ماہ حیض آنے پر صحبت کے لیے چوتھے دن کا انتظار کرنا چاہئے، اگر اگلی مرتبہ تین دن خون آتا ہے، تو اس کا مطلب یہ ہوگا کہ عادت واپس تین دن پر آگئی ہے۔ خلاصہ یہ ہے کہ ایک مرتبہ جتنے دن خون آئے اگلے مہینے صحبت کے لیے اتنے ہی دن انتظار کرنا چاہئے؛ البتہ غسل کرکے نماز پڑھنا اس وقت سے ضروری ہے، جس وقت سے خون بند ہو، چاہے عادت کے دنوں سے کم پر بند ہو۔ (بہشتی زیور، حصہ دوم، ص: ۶۰) وفي الدر: وہي تثبت وتنتقل بمرة ، بہ یفتی (شامی: ۱/۴۹۹، ط: زکریا)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات