India

سوال # 179161

ایک لڑکا جس کی عمر 16/17 سال کی تھی، نادانی میں کسی شہر کی مسجد سے وہاں پر رکھی ہوئی قرآن شریف انتظامیہ یا پھر کسی دیگر ذمے دار سے پوچھے بغیر اٹھا کر اپنے گھر لے آیا،اب تقریباً 13/14 سال کا عرصہ بیت جانے کے بعد اسے محسوس ہو رہا ہے کہ اس نے یہ کام غلط کیا ہے ،اب اس غلطی یا گناہ کے ازالے کی صورت کیا ہو سکتی ہے ؟ براہ کرم بتا کر شکریہ کا موقع عنایت فرمائیں۔ جزاکم اللہ خیرا

Published on: May 14, 2020

جواب # 179161

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:750-553/N=9/1441



اگر وہ قرآن اب بھی موجود ہے اورپڑھنے کے قابل ہے تو اُسی مسجد میں رکھ دیا جائے، جہاں سے اٹھایا تھا۔ اور اگر وہ قرآن گم ہوگیا ہے یا بوسیدہ ہوکر قابل استعمال نہیں رہا ہے تو مالیت میں اسی جیسا دوسرا قرآن خرید کر اُسی مسجد میں رکھ دیا جائے۔ اور بہر صورت جو غلطی ہوئی، اس پر توبہ واستغفار کیا جائے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات