معاشرت - طلاق و خلع

India

سوال # 176280

سوال یہ ہے کہ مرد کی بیوی کو طلاق دینے کی نیت نہیں تھی، اچانک فون پہ بول پڑا (میری طرف سے طلاق طلاق، طلاق، یہی جملہ تھا کہ بیچ میں ہی بیوی نے کال کاٹ دیا تو کیا حکم ہوگا؟

Published on: Feb 6, 2020

جواب # 176280

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 556-390/SN=06/1441



”طلاق ، طلاق ، طلاق“ یہ صریح الفاظ ہیں، اِن سے وقوع طلاق کے لئے نیت ضروری نہیں ہے؛ لہٰذا اگر شوہر نے واقعتاً بیوی کو یہ الفاظ کہے ہیں تو بیوی پر طلاقِ مغلظہ واقع ہوگئی اور بیوی حرمت غلیظہ کے ساتھ شوہر پر حرام ہوگئی۔ طلاق کا نیت نہ ہونا وقوعِ طلاق میں مانع نہ ہوگا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات