معاشرت - طلاق و خلع

India

سوال # 174236

مجھے فجر کی نماز میں بار بار وسوسہ آرہا تھا کہ میں نے طلاق دیدی ہے اور مجھے اب شک ہو رہا ہے میں نے اسے زبان پر لایا کیا اس سے طلاق ہو جائے گی؟ مہربانی کر کے رہنما ئی فرمائیں۔

Published on: Nov 13, 2019

جواب # 174236

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:207-181/L=3/1441



طلاق جب تک زبان سے نہ دی جائے اس وقت تک محض طلاق کے وسوسہ یا شک سے طلاق واقع نہ ہوگی۔



شک ہل طلق أم لا لم یقع.(الأشباہ والنظائر لابن نجیم ص: 52، الناشر: دار الکتب العلمیة، بیروت لبنان، الناشر: دار الکتب العلمیة، بیروت - لبنان)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات