معاشرت - اخلاق و آداب

India

سوال # 174499

میرا سوال یہ ہے کہ ہر نماز کے بعد تسبیحات پڑھتے ہیں وہ کونسے ہاتھ سے اور کس انگلی سے شروع کرنا چاہیے؟ دلائل کے ساتھ قرآن وحدیث کی روشنی میں جواب دیں۔ مہربانی ہوگی۔

Published on: Oct 21, 2019

جواب # 174499

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:42-60/sn=2/1441



نبی کریم ﷺ سے دائیں ہاتھ کے پوروں سے تسبیحات پڑھنا ثابت ہے؛ اس لیے مستحب یہ ہے کہ دائیں ہاتھ کے پورے سے تسبیحات پڑھے، رہا یہ سوال کہ کس انگلی کے پورے سے شروع کرے تو اس کی تفصیل نہیں مل سکی، بہر حال یہ کوئی ضروری امر نہیں ہے، آدمی حسب سہولت کسی بھی انگلی سے شروع کرسکتا ہے۔



عن عطاء بن السائب، عن أبیہ، عن عبد اللہ بن عمرو، قال: رأیت رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم یعقد التسبیح ، قال ابن قدامة: بیمینہ. (سنن أبی داود 2/ 81)، رقم:1502) عن عطاء بن السائب، عن أبیہ، عن عبد اللہ بن عمرو، قال: رأیت النبی صلی اللہ علیہ وسلم یعقد التسبیح بیدہ . (سنن الترمذی ، رقم: 3486)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات