متفرقات - دیگر

India

سوال # 178437

کسی ضرورتمند کی ضرورت کو پورا کرتے وقت فوٹو کھیچ کے اسے دوسروں کو بھی ہمتافزائی کے لئے اس کو وائرل کرنا کیسا ہے ؟ شرعی کیا حکم ہے ؟

Published on: May 14, 2020

جواب # 178437

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 776-626/D=09/1441



نفلی صدقات کے بارے میں اخفا یعنی خفیہ طور پر دینا افضل ہے۔ حدیث میں اخفا کی تعبیر اس طرح کی گئی ہے کہ داہنے ہاتھ سے خرچ کرے تو بائیں کو بھی پتہ نہ چلے۔ جس کا حاصل یہ ہے کہ قریبی آدمی پر بھی اس کا اظہار نہ ہو، اور اظہار اعلان ، نمائش یہ چیزیں تو اسلام میں (بدون خاص ضرورت کے ) سخت ناپسندیدہ ہیں کہ اس سے کبھی عمل کا ثواب ہی برباد ہو جاتا ہے۔ جاندار کی تصویر کشی اسلام میں جائز نہیں ہے گناہ کبیرہ ہے لہٰذا اسوال میں مذکور طریقے پر فوٹو کھینچنا اور اسے وائرل کرنا گناہ ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات