متفرقات - دیگر

Pakistan

سوال # 178339

امجد نے تنہائی میں کہا شیشہ توڑو اور پھر کہا توڑدو اس کی کوئی بھی نیت نہ تھی، کیا حکم ہے اس کے لئے ؟

Published on: May 14, 2020

جواب # 178339

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 769-622/D=09/1441



   ”شیشہ توڑو پھر کہا توڑ دو“، سیاق و سباق سے الگ ہوکر یہ ایک مباح یا مہمل جملہ ہے مباح مقصد کے بغیر اس طرح کے جملے کہنے سے بچا جائے۔ کہ فضول و لایعنی ہے۔



باقی اس جملہ سے اگر سیاق و سباق پر مشتمل کسی بات کی طرف اشارہ ہوتا ہو اور وہ بات از قبیل مباحات نہ ہو تو اس سے گریز کیا جائے اور جو غیر مشروع امر کا ابہام ہوا ہو اس سے توبہ کرلی جائے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات