عبادات - قسم و نذر

Pakistan

سوال # 57636

میری ساس اور سسر نے مجھے لڑائی کرکے گھر سے نکال دیاتھا، اس وقت میرا شوہر کوریا میں تھا، اس کو فون کرکے میری ساس نے میرے شوہر کو کہا کہ میرے ایمان کی قسم ہے تم نے اپنی بیوی اور اس کے گھر والوں سے کوئی رابطہ نہیں رکھنا اور اس نے تین ماہ تک مجھ سے کوئی رابطہ نہیں کیا پھر بیچ میں کسی آدمی کو ڈال کر ہم نے معاملہ صاف کروایا۔
میرا سوال یہ ہے کہ کیا ایمان کی قسم اٹھانا جائز ہے ؟ میں نے بہشتی یور میں پڑھا ہے کہ کوئی ایمان کی سچی قسم کھائے تو بھی اس کا آدھا ایمان جاتا رہتاہے، اگر جھوٹی کھائے تو ویسے ہی چلا جاتاہے؟

Published on: Feb 1, 2015

جواب # 57636

بسم الله الرحمن الرحيم

Fatwa ID: 310-307/B=4/1436-U

ہم بندوں کے لیے صرف اللہ کی قسم کھانا جائز ہے، اللہ کے سوا کسی اور چیز کی قسم کھانا دست نہیں، اگر کھالی تو توبہ واستغفار کرلینا کافی ہے، آپ کا کل ایمان باقی ہے۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات