عبادات - قسم و نذر

Saudi Arabia

سوال # 176701

میں آپ سے پوچھنا چاہتا تھا کہ میں ایک گورئمنٹ ملازم تھا اور میں نے استعفی دیئے بغیر نوکری چھوڑ کر دوسر ملک چلا گیا ہو تو اب کیا مجھے اس کا کوئی کفارہ دینا پڑے گا میں نے حلف اٹھایا کہ میں اللہ کو حاضر ناضر جان کر اپنی ڈیوٹی صحیح طرح انجام دوں گا - تو اب کیا مجھے اس کا کفارہ ادا کرنا پڑے گا اور اگر ہاں تو کتنا پلیز رہنمائی فرمائیں شکریہ

Published on: Mar 7, 2020

جواب # 176701

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:519-426/N=7/1441



اگر آپ کو ملازمت چھوڑنی تھی تو باقاعدہ استعفٰی دے کر ملازمت چھوڑنی چاہیے تھی؛ تاکہ متعلقہ محکمہ آپ کا حساب بے باق کرکے آپ کی جگہ کسی متبادل کا نظم کرلیتا، بہر حال اب آپ کو چاہیے کہ جلد از جلد متعلقہ محکمہ کو استعفٰی پہنچادیں اور اپنا حساب صاف کرلیں۔ باقی صورت مسئولہ میں آپ پر کوئی کفارہ واجب نہیں؛ کیوں کہ آپ نے ڈیوٹی پر حاضر ہوکر اللہ کو حاضر وناظر جان کر صحیح طرح انجام دینے کی قسم کھائی تھی اور صورت مسئولہ میں آپ ڈیوٹی پر حاضر ہی نہیں ہوئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات