عبادات - قسم و نذر

India

سوال # 170250

میں نے دعا کی اور یہ ارادہ کیا کہ اگر اللہ رب العالمین دعا کو قبول کرلے تو میں ایک جانور کی قربانی کروں گابرائے صدقہ، بہر حال ، الحمد للہ، دعا قبول ہوئی ، اب صدقہ میں جانور کی قربانی ہی کی جانی چاہئے؟ یااس کی جگہ اس کے برابر رقم ادا کی جاسکتی ہے؟ یا دنوں جائز ہیں؟

Published on: May 29, 2019

جواب # 170250

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 991-894/H=09/1440



محض ارادہ کرنے کی وجہ سے نذر منعقد نہ ہوئی اور اس کا ایفاء بھی واجب نہیں تاہم جب کہ مطلوبہ کام اللہ پاک نے کردیا تو بطور شکرانہ کے قربانی کردیں یا قربانی کے بجائے رقم کا صدقہ کردیں تو فی نفسہاس میں کچھ مانع نہیں بلکہ موجب اجر عظیم ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات