معاشرت - نکاح

India

سوال # 175896

کیا بریلوی مسلک کالڑکا جو مولانا احمد خان صاحب کے عقائد اور ان کے جو بھی الزامات علمائے دیوبند پر لگائے گئے ان کو خوب مانتا ہو تو کیا اس کا نکاح حنفی دیوبندی جو اپنے عقائد کی پکی ہے، اسے کرنا جائز ہے اور کیسا ہے؟

Published on: Feb 16, 2020

جواب # 175896

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 490-416/D=06/1441



شوہر بیوی کے درمیان موافقت اور نکاح کی پائیداری کے لئے، دونوں کے مزاجوں اور خیالات میں ہم آہنگی ضروری ہے، بریلویوں کے یہاں بہت سی رسوم و بدعات رائج ہوتی ہیں، اور کبھی ان کے بعض عقائد اہل سنت و الجماعت کے خلاف ہوتے ہیں، جس کا اثر ازدواجی زندگی پر پڑے گا، اور خود لڑکی کے متاثر ہونے اور بعد میں بچوں کی تربیت پر برا اثر پڑنے کا قوی اندیشہ ہے؛ لہٰذا بریلوی لوگوں کے یہاں نکاح نہیں کرنا چاہئے، ایسا کرنا خلاف احتیاط ہے، اور بعض اوقات ان کے کچھ عقائد کفر کی حد تک بھی پہنچ جاتے ہیں، اس صورت میں تو نکاح کرنا جائز ہی نہیں، بلکہ اگر کر لیا تو درست بھی نہ ہوگا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات