عبادات - جمعہ و عیدین

Pakistan

سوال # 173915

کیا فرماتے ہیں علمائکرام اس مسئلہ کے بارے میں ایک گاوَں ملک پاکستان صوبہ پنجاب ضلع مظفرگڑھ(مواضعات حاجی پور جنوبی / لال پور بھنڈہ) جو کہ دریائے چناب کی وسط میں جزیرہ کی شکل میں موجود ہے جس کی آبادی تقریباً 3456 افراد پر مشتمل ہے آبادی اکٹھے رہائش پذیر نہیں ہے ۔ گاوَں میں تقریباً ہر 8 کنال کے وقفے پر گھر ہیں ۔ گاوَں میں چند دوکانیں ہیں ۔ جن سے خور دونوش کی اشیائتو مل جاتی ہیں مگر کپڑا برتن یا دوسری اہم اشیا ئنہیں ملتی۔ گاوَں سے شہر 40کلومیٹر کے فاصلے پرموجو د ہے چاروں اطراف دریا ہونے کی وجہ سے دریا کو عبور کرنے کے لیے کشتی کا سہارا لیا جاتا ہے ۔ گاوَں کے اندر گاوَں کے افراد دو مسلکوں میں بریلوی اور دیوبندی مکتب فکر کے پروکار ہیں ۔ گاوَں کے اندر عوام الناس نماز عیدین عیدالفطر اور عید الضحیٰ پانچ مقامات پر اداکرتے ہیں اور ایک مسجد میں جمعتہ المبارک بھی ادا کیا جاتا ہے ۔ قرآن حدیث کی روشنی میں جمعتہ المبارک اور نماز عیدین کی ادائیگی کی شرعی حثیت واضح کی جائے ۔نمازی یا جمعتہ المبارک کی ادائیگی درست / جائز ہے یا نہیں ؟

Published on: Oct 23, 2019

جواب # 173915

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 162-130/M=02/1441



جہاں جمعہ جائز ہے وہاں عیدین کی نماز پڑھنا بھی جائز ہے اور جہاں جواز جمعہ کے شرائط نہیں پائے جاتے وہاں جمعہ و عیدین قائم کرنا جائز نہیں، سوال میں آپ نے جس گاوٴں کا تذکرہ کیا ہے وہاں جمعہ جائز ہے یا نہیں اس کے لئے بہتر طریقہ یہ ہے کہ مقامی یا قریبی دو اہل حق و تجربہ کار مفتیان کرام کو بلواکر گاوٴں کا معاینہ کرادیں، وہ حضرات تفصیلی معاینہ فرماکر جیسی رائے قائم کریں اس کے مطابق عمل کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات