معاملات - سود و انشورنس

PAKISTAN

سوال # 177042

میراسوال یہ ہے کہ کچھ لوگ بینک میں رقم فکس کرا دیتے ہیں اور بدلے میں بینک انہیں ہر ماہ کچھ رقم منافع کے طور پر دیتا ہے، اس معاملے میں کیا حکم شرع ہے ؟

Published on: Mar 5, 2020

جواب # 177042

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:669-494/L=7/1441



بینک میں رقم فکس کراکر بطور منافع کچھ رقم ہرماہ لیتے رہنا جائز نہیں ،یہ سودی شکل ہے۔ وہو فی الشرع عبارة عن فضل مال لا یقابلہ عوض فی معاوضة مال بمال.(الفتاوی الہندیة 3/ 117)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات