معاملات - سود و انشورنس

India

سوال # 176862

میں پشاور میں سرکاری ٹیچر ہوں ، اور میں گھر بنانے کے لیے بینک سے قرض لینا چاہتاہوں جو کہ مجھے انٹریسٹ کے ساتھ ماہانہ تنخواہ سے ادا کرنا ہوگا، میرے پاس کمانے یا گھر بنانے کی کوئی اور صورت نہیں ہے، کیا یہ جائز ہے؟

Published on: Feb 23, 2020

جواب # 176862

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 569-439/B=06/1441



جس طرح سود کا لینا شرعاً حرام ہے اسی طرح سود کا دینا بھی حرام ہے، مکان بنوانے کے لئے بینک لون لینے میں ماہانہ انٹریسٹ یعنی سود دینا ہوگا۔ اس لئے بینک سے قرض لینا شرعاً جائز نہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات