معاملات - وراثت ووصیت

India

سوال # 175847

کیا فرماتے ہیں علمائے کرام اس مسٴلہ کے بارے میں کہ اگر کوئی آدمی مر جائے تو اس کا راشن کارڈ کے ذریعے ملا ہوا راشن اس کے اہل و عیال کے لیے استعمال کرنا شریعت کے مطابق کیسا ہے ؟

Published on: Jan 21, 2020

جواب # 175847

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:379-288/sd=5/1441



 جو راشن زندگی میں ملا تھا، وہ انتقال کے بعد ترکہ بن جائے گا، لہذا شرعی ورثاء کے درمیان حسب حصص شرعیہ تقسیم ہوگا اور ورثاء اگر چاہیں تو باہمی رضامندی سے مشترکہ طور پر بھی استعمال کرسکتے ہیں اور اگر راشن انتقال کے بعد ملا ہے، تو اس سلسلے میں حکومت کا جو ذابطہ ہو، اس کی وضاحت کریں، کیا انتقال کے بعد مرحوم کے راشن کارڈ سے راشن مل سکتا ہے؛ اور کس کو یہ راشن ملتا ہے؟ ورثاء میں کیا کسی خاص وارث کو راشن حاصل کرنے کا حق حاصل ہوتا ہے؟ جو بھی ضابطہ ہو وضاحت کریں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات