معاملات - وراثت ووصیت

India

سوال # 172082

ایک بیوہ عورت کا انتقال ہو گیا اس کی ایک سوتیلی ماں حیات ہے اور اس کے اپنے دو بیٹے اور دو بیٹی ہیں۔ مرحومہ کے پاس کچھ رقم پڑی تھی اس کی تقسیم کس طرح ہوگی؟ براہ کرم قران و سنت کی روشنی میں جواب دیں عین نوازش ہوگی۔ شکریہ۔

Published on: Jul 25, 2019

جواب # 172082

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 1159-993/D=11/1440



 



اگر مرحومہ کے حقیقی والدین نہیں ہیں تو بعد ادائے حقوق متقدمہ علی الارث صورت مسئولہ میں اس رقم کو چھ حصوں میں تقسیم کرکے 2-2 حصے مرحومہ کے دونوں لڑکوں کو ، اور 1-1 حصہ مرحومہ کی دونوں لڑکیوں کو دیا جائے گا۔



کل حصے   =             6



-------------------------



بیٹا                            =             2



بیٹا                            =             2



بیٹی                           =             1



بیٹی                           =             1



سوتیلی ماں                =             x



--------------------------------



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات