معاملات - وراثت ووصیت

India

سوال # 171894

چچا کا انتقال ہوگیا ہے جو صاحب جائیداد اور غیر شادی شدہ تھے، والدین، نانا نانی یا دادا دادی حیات نہیں ہے جنکے 4 بھائی اور 3 بہینیں ہیں جن میں ایک بہن اور دو بھائی کا اتقال ہوگیا ہے مسئلہ یہ ہے اس جائیداد کے کون کون حقدار ہیں کیونکہ ابھی چاچا کی وراثت کی تقسیم کے لئے تمام بھتیجے بھتیجیاں ، بھانجے بھانجیاں وراثت کا دعوی کررہے ہیں۔ مہربانی فرماکر شرعی لحاظ سے کسطرح وراثت تقسیم ہوگی جواب تفصیل سے دیں۔

Published on: Aug 6, 2019

جواب # 171894

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1349-1164/L=12/1440



صورتِ مسئولہ میں اگرآپ کے چچا کی وفات کے وقت ان کے صرف دوبھائی اور دوبہنیں حیات تھیں تو مرحوم کا تمام ترکہ انھیں چاروں کے درمیان اس طور پر تقسیم ہوگا کہ تمام ترکہ ۶/حصوں میں منقسم ہوکر دودو حصے دونوں بھائیوں میں سے ہر ایک کو اور ایک ایک حصہ دونوں حیات بہنوں میں سے ہر ایک کو مل جائے گا۔ مرحوم کے بھتیجے بھتیجیاں ،بھانجے بھانجیاں سب مرحوم کے ترکہ سے محروم ہوں گے ۔



مسئلہ کی تخریج شرعی درج ذیل ہے :



بھائی         2



بھائی         2



بہن          1



بہن          1



بھتیجے        محروم



بھتیجیاں    محروم



بھانجے      محروم



بھانجیاں    محروم



نوٹ:اگر مرحوم کے بھائی بہنوں میں سے کسی کی وفات مرحوم کے بعد ہوئی ہو تو اس کے ورثاء کی تفصیل لکھ کر دوبارہ سوال کرلیا جائے ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات