India

سوال # 175872

ذبیحہ کی کون سی چیزیں قطعاً حرام ہیں؟

Published on: Jan 21, 2020

جواب # 175872

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 513-382/B=05/1441



فقہاء نے حلال جانور کی سات چیزوں کو حرام لکھا ہے۔



(۱) بہنے والا خون۔ (۲) ذکر (عضو تناسل) ۔ (۳) مادہ جانور کی شرمگاہ۔ (۴) خصیتین ۔ (۵) مثانہ۔ (۶) پتہ۔ (۷) غدود (جسم کے اندر کی گانٹھ ، گلٹی)۔



ان میں سے بہتے ہوئے خون کی حرمت قطعی ہے جس کا تذکرہ قرآن میں آیا ہے۔ کرہ تحریماً وقیل تنزیہاً، والأول أوجہ ، من الشّاة سبع: الحیاء ، والخصیة والغدّة والمثانة والمرارة ، والدّم المسفوح والذکر للأثر الوارد في کراہة ذلک ۔ (الدر المختار، کتاب الخنثی، ۱/۴۷۸، زکریا دیوبند) قال اللہ تعالی: ”إلاّ أن یکون میتةً أو دماً مسفوحاً أو لحم خنزیر الخ ۔ (انعام: ۱۳۵) ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات