Pakistan

سوال # 171147

مجھے یہ معلوم کرنا تھا کہ نقلی زیورات یا پھر آج کل جو انگوٹھیاں مارکیٹ ہیں ہمیں نہیں پتا کہ کس دھات کی ہیں ، کیا ان کو پہننا منع ہے؟

Published on: Jul 13, 2019

جواب # 171147

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:898-786/sd=11/1440



مرد کے لیے صرف ایک مثقال چاندی (۴/گرام ۳۷۴/ ملی گرام) کی انگوٹھی کی اجازت ہے اس سے زائد استعمال کرنا درست نہیں اور بلاضرورت چاندی کی انگوٹھی پہننا بھی بہتر نہیں۔



ولا یتحلی الرجل بذھب وفضّة مطلقا إلا بخاتم ولایزد علی مثقال وترک التختم لغیر السلطان والقاضی وذی حاجة إلیہ کمتول أفضل الخ (شامی)



اورعورتوں کے لیے سونے، چاندی ہیرے اور دوسری دھات کے بنے ہوئے زیورات پہننا بلاکراہت درست ہے؛ لیکن انگوٹھی عورتوں کے لیے بھی صرف سونے اور چاندی کی پہننا درست ہے، دوسری دھات کی انگوٹھی پہننا عورت کے لیے بھی مکروہ ہے۔ والتختم بالحدید والصفر والنحاس والرصاص مکروہ للرجال والنساء۔ (شامی)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات