Canada

سوال # 3393

ہمارے گھر کے پاس ایک اسماعیل عورت رہتی ہے وہ اکثر اوقات کچھ پیسے مجھے دے جاتی ہے کہ جب میں مسجد جاوٴں تو صدقہ والے ڈبے میں ڈال دوں۔ میں یہ جاننا چاہتا ہوں کہ کیا ان کے پیسے مسجد کے چندے والے ڈبے میں ڈالنا جائز ہے یا نہیں؟ اگر نہیں تو میں ان کو انکار کیسے کروں؟

Published on: Jan 24, 2008

جواب # 3393

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی: 1072/ د= 94/ ک


 

صورتِ مسئولہ میں وہ عورت جو اسماعیلی فرقہ کی ہے اور آپ کو مسجد کے بکس میں ڈالنے کے لیے پیسے دیتی ہے اگر اس کے عقائد کفریہ ہیں تو کفریہ عقائد کی بنا پر وہ مرتد کے حکم میں ہے اس کا پیسہ مسجد میں لگنا درست نہیں ہے۔

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات