عبادات - طہارت

Pakistan

سوال # 176634

کہنا یہ تھا کہ شدید کھانسی کی وجہ سے پیشاب کے قطرے نکل جاتے ہیں، حمل کی وجہ سے ڈاکٹر نے کہا کہ کمزوری ہوجاتی ہے، سارا دن پریشانی میں گذرتا ہے، کپڑے ناپاک نہ ہوں، نماز کے لیے پریشانی ہے، کیا میرے لیے معذوری کا حکم ہے؟

Published on: Feb 17, 2020

جواب # 176634

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 586-431/SN=06/1441



سوال میں جو تفصیل آپ نے لکھی ہے، اس کی رو سے آپ ”معذور شرعی“ نہیں ہیں، پیشاب خطا کر جانے پر آپ کا وضو ٹوٹ جائے گا، اگر کپڑے پر ہتھیلی کی گہرائی کی مقدار سے زیادہ پیشاب لگ جائے گا تو اس کے ساتھ نماز نہ ہوگی؛ اس لئے اس کا دھیان رکھیں۔ بہتر ہے کہ آپ نماز کے لئے ایک خاص کپڑا رکھیں، نماز پڑھ کر اسے اتار دیا کریں نیز اگر یہ خطرہ ہو کہ دورانِ نماز کھانسی کی وجہ سے پیشاب خطا کرجائے گا تو مختصر قرأت کے ساتھ نماز پڑھ لیا کریں؛ بلکہ اگر بیٹھ کر نماز پڑھنے سے خطرہ کم ہو تو بیٹھ کر بھی نماز پڑھ سکتی ہے۔ باقی صبر سے کام لیں اور اللہ تعالی سے صحت و عافیت کی دعا کرتی رہیں۔ اللہ تعالی آپ کی پریشانی کو دور فرمائے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات