عبادات - طہارت

India

سوال # 176287

ناف سے کبھی کبھی میل سی رطوبت یا میل نکلتا ہے کیا اس سے وضو ٹوٹ جائے گا ؟کیا جس جگہ پر یہ لگ جائے اس کو دیوے بغیر نماز ہوجائے گی اگر نہیں تو کیا کپڑے بدلنا ضروری ہے ؟

Published on: Feb 17, 2020

جواب # 176287

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:523-438/L=6/1441



اگر ناف سے رطوبت اندرونی کسی زخم سے نکلی ہو تو وضو ٹوٹ جائے گا؛ البتہ اگر محض گرمی کا اثر ہو یا ناف سے میل نکلے تو وضو نہیں ٹوٹے گا۔



وإذا خرج من أذنہ قیح أو صدید ینظر إن خرج بدون الوجع لا ینتقض وضوء ہ وإن خرج مع الوجع ینتقض وضوء ہ لأنہ إذا خرج مع الوجع فالظاہر أنہ من الجرح (عالمگیری: ۱۰/۱) فأما الإنسان فإن ما یخرج منہ علی ثلاثة أقسام: قسم منہ ظاہر وبخروجہ لا ینتقض الوضوء وإن أصاب شیئًا لا ینجسہ وہو عشرة أشیاء: وسخ الأذن، ودموع العین والمخاط والبزاق الخ ․․․ (النتف فی الفتاوی: ۲۶/ ما یخرج من الإنسان)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات