عبادات - صلاة (نماز)

india

سوال # 157631

میرا نام اظہر رحمانی ہے بہار کے مدھے پورہ ضلع سے ، عرض یہ ہے کہ میں اپنے وطن مدھے پورہ سے چلہ کی جما عت کے لئے نکلا اور میں نے سفر شرعی کی نیت کی ،لیکن ہمیں جماعت کا رخ اپنے علاقہ کا ملا جو کہ سفر شرعی نہیں ہے ،آئندہ پانچ دس دن میں امید ہے کہ ہمیں دور دراز علاقے کا رخ مل جائیگا جو کہ سفر شرعی ہے ،تو سوال یہ ہے کہ اِسوقت ہماری نمازوں کا کیا حکم ہوگا؟ میں مسافر شمار ہوں گا یا نہیں؟ مدلل جواب مطلوب ہے ۔

Published on: Jan 9, 2018

جواب # 157631

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:330-296/M=4/1439



صورت مسئولہ میں جماعت کا رُخ اپنے علاقہ میں طے ہوجانے کے بعد جب آپ نے پانچ دس دن کے لیے سفر شرعی کا ارادہ ترک کردیا، تو بھی جب تک آپ اپنے علاقہ میں رہیں گے اتمام کریں گے اور جب یکبارگی مسافت شرعی کے ارادے سے علاقہ کی آبادی سے باہر نکل جائیں گے تو اس وقت سے سفر کے احکام جاری ہوں گے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات