معاشرت - اخلاق و آداب

India

سوال # 172534

کیا فرماتے ہیں علماء دین و مفتیان شرع متین مسئلہ ذیل میں زید کے پاس دعا کی کتاب ہے جس میں مسنون دعاوں کے ساتھ دعائے ماثورہ بھی موجود ہیں جسے وہ بیت الخلاء میں بھی لے کر چلا جاتا ہے جاننا تھا اس میں شریعت کا حکم ہے ؟

Published on: Aug 25, 2019

جواب # 172534

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:1058-872/sn=12/1440



 اگر اس طرح کی کتاب کسی غلاف وغیرہ سے ڈھکی ہوئی ہے تو فی نفسہ بیت الخلاء میں لے جانے کی گنجائش ہے؛ لیکن بہتر یہ ہے کہ نہ لے جائے۔



رقیة فی غلاف متجاف لم یکرہ دخول الخلاء بہ، والاحتراز أفضل.... (قولہ: رقیة إلخ) الظاہر أن المراد بہا ما یسمونہ الآن بالہیکل والحمائلی المشتمل علی الآیات القرآنیة، فإذا کان غلافہ منفصلا عنہ کالمشمع ونحوہ جاز دخول الخلاء بہ ومسہ وحملہ للجنب. (الدر المختار وحاشیة ابن عابدین (رد المحتار) 1/ 321،ط: زکریا، دیوبند)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات