India

سوال # 168998

مرغی ذبح کرنے میں کوئی ہندو پکڑے اور مسلم ذبح کرے تو جائز ہے؟

Published on: Mar 7, 2019

جواب # 168998

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:582-477/N=6/1440



اگر چھری پھیرنے میں ہندو نے مسلمان کا تعاون نہیں کیا، اس نے صرف مرغی پکڑی اور دبائی اور مسلمان نے تنہا چھری پھیرکر مرغی ذبح کی تو یہ ذبیحہ حلال وجائز ہوگا۔



فیھا - فی البزازیة- تشترط التسمیة من الذابح حال الذبح الخ (الدر المختار مع رد المحتار، کتاب الذبائح، ۹: ۴۳۸، ط: مکتبة زکریا دیوبند)، قولہ:”من الذابح“: أراد بالذابح محلل الحیوان لیشمل الرامي والمرسل وواضع الحدید اھ ح، شمل ما إذا کان الذابح اثنین فلو سمی أحدھما وترک الثاني عمداً حرم أکلہ کما فی التاترخانیة (رد المحتار)، وفیھا - فی الخانیة-: أراد التضحیة فوضع یدہ مع ید القصاب فی الذبح وأعانہ علی الذبح سمی کل وجوباً فلو ترکھا أحدھما أو ظن أن تسمیة أحدھما تکفي حرمت (الدر المختار مع رد المحتار، کتاب الأضحیة، ۹: ۴۸۲)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات