India

سوال # 165165

میرا سوال ہے کہ ایک آدمی نے قربانی کی دعا اور بسم اللہ اکبر، پڑھ کے قربانی کی اور اللھم تقبلہ منی پڑھنے سے پہلے ، ھوں ھاں نھی اچھا وغیرہ کے الفاظ کہے اس کے بعد. اللھم الخ پڑھا تو کیا اس کی قربانی ھو گئی ؟ کیا مسئلہ ہے ،یعنی قربانی کی دعا کے درمیان بات کرنا، اور اس کے بعد دعا پڑھنا کیساہے ؟ براہ کرم جواب تحریر کریں۔

Published on: Oct 18, 2018

جواب # 165165

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 34-38/B=2/1440



قربانی درست ہونے کے لئے نیت اور ذبح کے وقت ”بسم اللہ اللہ اکبر“ پڑھ لینا کافی ہے، بقیہ مشہور دعائیں مستحب ہیں، اس لئے اگر کسی شخص نے ذبح کے بعد ”اللہم تقبّلہ منی “ پڑھنے سے پہلے ہاں ، ھوں کرلیا یا بات چیت کرلی پھر دعا پڑھی تو اس سے قربانی پر کوئی اثر نہیں پڑے گے قربانی درست ہوگئی؛ البتہ دعاوٴں کے درمیان بات چیت کرنا مناسب نہیں۔ وفیہا تشترط التسمیة من الذّابح حال الذّبح ۔ (الدر المختار: ۹/۴۳۸، زکریا) ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات