عبادات - قسم و نذر

India

سوال # 167149

میری عمر ۲۱ سال ہے اور میں نے یہ نذر مانگ لی تھی کہ اللہ مجھے امیر کردے ، میں مسجدیں بنواؤں گا، اور میں ابھی پڑھ ہی رہاہوں ، مجھے ان چیزوں کے بارے میں زیادہ پتا نہیں تھا،سوال یہ ہے کہ؛
(۱)کیا اگر میں امیر ہوگیا تو مجھے مسجدوں بنوانی پڑیں گی؟
(۲) نذر ومنت صرف ان چیزوں کی صحیح ہوتی ہیں جو مقصودہ عمل ہو تو کیا مسجدوں بنوانا مقصودہ عمل ہے؟

Published on: Dec 24, 2018

جواب # 167149

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 260-248/D=04/1440



(۱، ۲) عبادت مقصودہ کی نذر ماننا درست ہوتا ہے مسجد تعمیر کرنا اگرچہ واجب ہے لیکن عبادت مقصودہ میں سے نہیں ہے اس لئے امیر ہونے پر مسجد تعمیر کرانا بربنائے نذر تو واجب نہ ہوگا لیکن حیثیت ہو جانے پر ضرورت کے موقعہ پر مسجد کرادیں تو بہت اچھا ہے کہ بڑے ثواب کا کام ہے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات