معاشرت - نکاح

India

سوال # 169819

حضرت یہ بتائیں نکاح کے لیئے صحیح عمر کتنی ہونی چاہیے قرآن اور حدیث کی روشنی میں لڑکے کے لیئے اور لڑکی کے لیئے ؟

Published on: Apr 7, 2019

جواب # 169819

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 791-658/B=07/1440



حدیث شریف میں آیا ہے جس کا مفہوم یہ ہے کہ لڑکا لڑکی جب بالغ ہو جائیں اور ان کا جوڑا مل جائے تو شادی میں تاخیر نہ کرنی چاہئے بلکہ جلد سے جلد نکاح کردینا چاہئے اور اپنے فریضہ سے ماں باپ کو سبکدوش ہو جانا چاہئے۔ لڑکے اور لڑکی دونوں شریعت اسلام میں ۱۵/ سال کی عمر کے بعد بالغ ہوجاتے ہیں۔ اور سرکاری قانون کے اعتبار سے لڑکی کی عمر ۱۸/ سال ، اور لڑکے کی عمر ۲۱/ سال کا ہونے کے بعد اس کا نکاح کرنا چاہئے۔ اس میں عمر کی پختگی یا احتیاط کا خیال رکھا گیا ہے۔ بہرحال بالغ ہونے کے بعد جلد ہی نکاح کردینا چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات