عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

India

سوال # 168323

کوئی ولی قبر کے اندر اسے سلام کرتے ہیں تو وہ جواب دیتا ہے کہ نہیں ایسا عقیدہ رکھنا کیسا ہے ؟

Published on: Feb 18, 2019

جواب # 168323

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 590-581/H=06/1440



جن کو سلام کیا جاتا ہے خواہ وہ ولی ہوں یا عام مسلمان اپنی قبروں میں زندوں کے سلام کا جواب دیتے ہیں ہٰکذا فی الفتاویٰ المحمودیہ: ۱/۵۷۱، من اشہر ذالک ما رواہ ابن عبد البر مصححا لہ عن ابن عباس رضی اللہ عنہما مرفوعاً مامن احد یمر بقبر اخیہ المسلم کان یعرفہ فی الدنیا فیسلم علیہ الا رد اللہ علیہ روحہ حتی یرد علیہ السلام (تفسیر ابن کثیر ، سورة الروم: ۳/۵۸۰۔



عن ابي ہریرة رضی اللہ عنہ قال اذا مرّ الرجل بقبر اخیہ یعرفہ فسلم علیہ رد علیہ السلام وعرفہ واذا مرّ بقبر لایعرفہ فسلم علیہ رد علیہ السلام (کتاب الروح المسألة الاولیٰ ہل تعرف الاموات زیارة الاحیاء ص: ۱۲ (حاشیة فتاویٰ محمودیہ) ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات