عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

Pakistan

سوال # 168308

کیا حضرتِ عیسیٰ علیہ السلام پہلے مٹی کا پرندہ بناتے تھے اور پھر اس میں جان ڈال کر اڑاتے تھے اور حضرت عیسیٰ علیہ السلام نے کتنے پرندوں کو بنایا اور وہ کون کون سے ہیں؟ وضاحت سے اور تفصیل سے بیان کردیں کہ قرآن وحدیث کی روشنی میں اس بات کی حقیقت کیا ہے ؟
جزاکم اللہ خیرا کثیرا کثیرا

Published on: Feb 3, 2019

جواب # 168308

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 688-563/B=05/1440



قرآن پاک میں سورہ مائدہ، آیت: ۱۱۰/ میں اللہ تعالی یوں فرماتا ہے وَاِذْ تَخْلُقُ مِنَ الطِّیْنِ کَہَیْئَةِ الطَّیْرِ بِاِذْنِیْ فَتَنْفُخُ فِیْہَا فَتَکُوْنُ طَیْرًا بِاِذْنِیْ جس کا مفہوم ہے کہ حضرت عیسیٰ علیہ السلام اللہ کے حکم سے پرندوں جیسی شکل مٹی سے بناتے پھر اس میں پھونک مارتے تو اللہ کے حکم سے حقیقی پرندے بن جاتے۔ پھر یہ سوال کرنا کہ انہوں نے کتنے پرندے اور کون کون سے پرندے بنائے اس کا عمل سے یا عقیدہ سے کوئی تعلق نہیں۔ اس طرح کا سوال نہ کرنا چاہئے یہ غیر ضروری سوال ہے۔ یہ ایسا ہی ہے جیسے کوئی پوچھے کہ حضرت آدم علیہ السلام جنت سے دنیا میں تشریف لائے تو کون سی سڑک سے آئے یا کوئی یہ پوچھے کہ اصحاب کہف کے کتے کا کیسا رنگ تھا۔ ایسے غیر ضروری سوالات میں نہ پڑنا چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات