عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

Pakistan

سوال # 166299

کیا فرماتے ہیں علماء دین ومفتیان عظام اس مسئلہ کے بارے میں کہ ہمارے ہاں ایک آدمی ہے جو کہتا ہے کہ میرے مطالعہ کے مطابق عیسی علیہ السلام کا دوبارہ نزول دنیا کو یہ عقیدہ رکھنا صحیح نہیں ہے ۔ یعنی وہ عیسی علیہ السلام کے نزول کے منکر ہے کیا یہ مسلمان ہے یا نہیں؟اور جو اس قسم کا نظریہ رکھتا ہوں اس کا کیا حکم ہے ؟ ثانیا یہ کہ کیا متواتر حدیث کا انکار کرنا کفر ہے یا نہیں؟ ثالثا یہ کہ اگر کوئی نصوص میں تاویل کرکے یہ عقیدہ رکھتا ہے تو اس کا کیا حکم ہے ؟۔ یعنی مؤوّل اور غیر مؤؤل کا اس طرح عقیدہ رکھنا کیسا ہے ؟

Published on: Dec 8, 2018

جواب # 166299

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:182-219/sd=3/1440



(۱) قرب قیامت حضرت عیسی علیہ السلام کے نزول کا عقیدہ ضروریات دین میں سے ہے ، اس کا انکار کرناکفر ہے ،جو شخص ذ ہو، وہ دائرہ اسلام سے خارج ہے۔



(۲) متواتر حدیث سے جو چیز ثابت ہو، اُس کا انکار کرنا کفر ہے۔



 (۳) حضرت عیسی علیہ السلام کے نزول کے بارے میں تاویل کرنا جس سے نزول کا اجماعی اور قطعی معنی بندل جائیں ؛ یہ بھی کفر ہے ، ایسا شخص بھی دائرہ اسلام سے خارج ہوگا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات