عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

Pakistan

سوال # 165968

مجھے شدید وسواس ہوتے ہیں۔ میں اللّٰہ کے بارے میں پڑھتی ہوں مثلاً اس کی کوئی حد نہیں ہے تو میرے ذہن میں تصویر آتی ہے ۔ جیسے آسمان کی دور تک کوئی حد نظر نہیں آتی شاید اس کا مطلب یہ ہے ۔ پھر میں کلمہ پڑھتی اور کہتی اللّٰہ اگر کفر ہو گیا تو معافی اور اگر جھٹلا دیا اور یہ تصور ٹھیک ہے تو بھی معافی۔ اس طرح بو بہت بار ہوا۔ اگر میرے دماغ والی تصویر صحیح ہو تو کیا کلمہ پڑھنے سے کفر تو نہیں ہوا؟

Published on: Oct 30, 2018

جواب # 165968

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:106-73/N=2/1440



آپ کو جو نہایت نامناسب وساوس وخیالات آتے ہیں، ان سے گھبرانے اور پریشان ہونے کی ضرورت نہیں، اس طرح کے وساوس شیطان کی طرف سے ہوتے ہیں اور حضرات صحابہکو بھی پیش آئے تھے ۔ اور ان کا حل وعلاج یہ ہے کہ ان کی طرف توجہ نہ کی جائے اور جب بھی اس طرح کا وسوسہ آئے ، فوراً أَعُوْذُ بِاللّٰہِ مِنَ الشَّیْطٰنِ آمَنْتُ بِاللّٰہِ وَرُسُلِہ پڑھ لیا جائے، إن شاء اللہ کچھ ہی عرصہ میں ان وساوس کا سلسلہ بند ہوجائے گا ۔ اور صورت مسئولہ میں کوئی کفر کا حکم نہ ہوگا، آپ پریشان نہ ہوں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات