عقائد و ایمانیات - اسلامی عقائد

Pakistan

سوال # 1596

اللہ عز وجل فر ماتے ہیں کہ میں تیرے شہ رگ سے بھی زیا دہ قریب ہوں تو مجھ سے مانگ ۔ تو لوگ کسی اور کو وسیلہ کیونکر بناتے ہیں، کیا یہ جائز ہے؟

Published on: Sep 24, 2007

جواب # 1596

بسم الله الرحمن الرحيم

فتوی: 530/ د= 526/ د


 


بیشک اللہ تعالیٰ شہ رگ سے بھی قریب ہیں نَحْنُ اَقْرَبُ اِلَیْہِ مِنْ حَبْلِ الْوَرِیْدِ نیز اللہ تعالیٰ نے یہ بھی ارشاد فرمایا ہے اُدْعُوْنِیْ اَسْتَجِبْ لَکُمْ مجھ سے مانگو میں تمھاری دعا کو قبول کروں گا۔ اور مانگنے کا طریقہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے اپنے قول وعمل سے بتلایا ہے، وسیلہ سے دعا مانگنا بھی احادیث سے ثابت ہے، اس لیے وسیلہ سے دعا کرنا جائز ہے، ابن ماجہ اور مشکوة میں روایتیں موجود ہیں۔ اصحاب غار کا اپنے اعمال خیر کے وسیلہ سے دعا کرنا حدیث میں آیا ہے۔ اور یہ بھی مروی ہے عن النبي صلی اللہ علیہ وسلم أنہ کان یستفتح بصعالیک المھاجرین (مشکوة: ج۲ ص۴۴۷)


واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات