معاملات - سود و انشورنس

India

سوال # 167039

میرا سوال یہ ہے کہ بینک میں میرا سوینگ اکاؤنٹ ہے، اکاؤنٹ میں ہی میری تنخواہ اور سارے پیسے آتے ہیں ، اور بینک میرے اکاؤنٹ پر مجھے انٹریسٹ دیتی ہے، اور میرے اکاؤنٹ سے طرح طرح کے چارجیز بھی کاٹ لیتی ہے جیسے اے ٹی ایم ریننول چارج(ATM renewal charge ) ، اکاؤنٹ مینٹنینس چارج(Account mantenes charge)، ٹرانسزیکشن چارج(Transaction charge)، وغیرہ، تو میرا سوال یہ ہے کہ جو پیسہ بینک مجھے انٹریسٹ کی شکل دیتی ہے، وہی پیسہ ہم بینک کو ٹیکس یا چارج کی شکل میں واپس کردیتے ہیں اور میری جو اصل رقم ہے وہ تو ویسے ہی رہے گا جیسے تھا، مجھے نہ تو انٹریسٹ چاہئے اور نہ ہی میں بینک کو اپنے پیسے میں سے کوئی چارج دوں گا، تو کیا یہ صحیح ہے؟

Published on: Dec 24, 2018

جواب # 167039

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:298-268/SD=4/1440



بینک آپ کے کھاتے میں سے جو چارجیز کاٹتی ہے ، اگر اُس کے بدلے آپ کو کوئی سہولت یا نفع حاصل ہوتا ہے ، جیسے ، اے ٹی ایم رینول چارج، اکاوٴنٹ مینٹینینس چارج، ٹرانژیکشن چارج وغیرہ،یہ چارجیز ایسے ہیں،جن کے بدلے بینک کی طرف سے مختلف سہولیات دی جاتی ہیں ،لہذا ایسے چارجیز سے انٹریسٹ کی رقم منہا کرنا جائز نہیں ہے ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات