معاملات - وراثت ووصیت

India

سوال # 160762

کیا فرماتے ہیں مفتیانِ اکرام مسئلہ ذیل کے بارے میں؟ ہم چار بہنیں اور دو بھائی ہیں ایک بھائی کا انتقال ہو چکا ہے اور جس بھائی کا انتقال ہوا ہے اس کی شادی نہیں ہوئی تھی۔اب ہمارے ماں باپ کا بھی انتقال بہت پہلے ہو چکا ہے ۔اب میرے والد کی زمین جائیداد پر میرا ایک بھائی قابض ہے اور وہ بہنوں کو باپ کی جائیداد میں سے کچھ بھی نہیں دے رہا ہے جبکہ بہنیں خود مجبور ہیں۔ اب آپ بتائیں کہ کیا بہنوں کو اپنا حق معاف کر دینا چاہیے یا نہیں؟صورت مسئلہ میں بہنوں کو کیا کرنا چاہیے ؟

Published on: Apr 15, 2018

جواب # 160762

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:990-837/L=7/1439



بہنوں کا حق منجانب اللہ مقرر ہے ،بھائی کا بہنوں کو ان کا حق نہ دینا ظلم اور زیادتی ہے،بھائی کو چاہیے کہ بہنوں کو ان کا حق ان کو دیدے،آپ تمام بہنوں کو چاہیے کہ اچھے انداز میں بھائی سے اپنے حق کا مطالبہ کرتی رہیں،اوراگر اس کے لیے کسی بڑے آدمی کو بیچ میں ڈال کر اپنا حق وصول کرلیں تو یہ بھی بہتر ہے ،اوراگر بہنیں اپنے حصے کے عوض رقم وغیرہ لے کر اپنے حصے سے دستبردار ہوجائیں تو اس کی بھی گنجائش ہے ؛البتہ اس کے علاوہ محض زبان سے معاف کردینے سے حق ساقط نہیں ہوتا ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات