متفرقات - حلال و حرام

Pakistan

سوال # 170372

جناب بندہ ایک پرائیویٹ ادارہ میں کام کرتا ہے بندہ کو کام کرتے ہوئے 12 سال کا عرصہ گزر چکا ہے بندہ کی تنخواہ15000 ہے اور بندہ کی سالانہ تنخواہ نہیں بڑھی گئی جبکہ ادارہ کے سربراہان کے اخراجات روز بر روز بڑھتے جار ہے ہیں لیکن اُن کو اپنے سٹاف کی کوئی فکر نہیں ہے ۔ ہمیں ہمارا حق نہیں دیا جا رہا۔
آپ سے سوال ہے کہ کیا ہم کسی بھی اور طریقے سے اپنا حق لے سکتے ہیں؟ (مثلا دھوکہ، فریب اور جھوٹ وغیرہ) جب بھی ہم ُان کے پاس جاتے ہیں وہ بھی ہم سے جھوٹ بولتے ہیں کہ ہمارے پاس ابھی بجٹ نہیں ہے ۔
براہ کرم رہمنائی فرمائیں۔

Published on: May 13, 2019

جواب # 170372

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 907-750/B=09/1440



جھوٹ، فریب اور دھوکہ دے کر زیادہ تنخواہ لینا جائز نہ ہوگا۔ اس لئے جو تنخواہ مل رہی ہے اسی پر قناعت کریں۔ اگراخراجات پورے نہیں ہو پارہے ہیں توکوئی دوسری جائز ملازمت تلاش کریں جہاں پیسے زیادہ ملتے ہوں۔ لیکن دھوکہ فریب کے ذریعہ زیادہ کمائی کی فکر نہ کرنی چاہئے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات