متفرقات - حلال و حرام

India

سوال # 167034

کیا فرماتے ہیں مفتیان عظام مسئلہ ذیل میں زید کی ایک زمین ہے جس کی بازار میں قیمت بارہ لاکھ روپئے ہے ، لیکن سرکاری قیمت پانچ لاکھ کے قریب ہے ، گورنمنٹ روڈ چوڑی کرنے کے لئے زید کی زمین کا کچھ حصہ اقوائر کر رہی ہے اور اس کا معاوضہ بہت کم تقریبا تین لاکھ تیس ہزار کے حساب سے دے رہی ہے . لیکھپال نے اس زمین پر فرضی تعمیرات وغیرہ لکھوا کر رقم بڑھوا دی ہے ، لیکن اب بھی وہ تمام رقم زمین کی مارکیٹ قیمت سے کم ہے . کیا زید کے لئے ایسی تمام رقم استعمال میں لانا جائز ہے ؟

Published on: Nov 27, 2018

جواب # 167034

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 376-344/H=3/1440



اگر یہ حقیقت ہے کہ اب بھی وہ تمام رقم زمین کی مارکیٹ (قیمت مثل) سے کم ہے تو ایسی تمام رقم کا استعمال آ پ کے حق میں حرام و ناجائز نہیں ہے مگر لیکھپال نے جو کچھ کیا وہ قانوناً درست نہیں اور شریعت مطہرہ بھی اس کو استحسان کی نظر سے نہیں دیکھتی۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات