متفرقات - حلال و حرام

India

سوال # 160432

کیا ہم اپنے کسی رشتہ دار یا کسی دوست یا کسی ضرورتمند کو خون دان کر سکتے ہیں یا نہیں؟ کیا خون دان کرنے کی سرف گنجائش ہے یا پھر کسی مجبور یا ضرورتمند د کو خون دان کرنا ثواب بھی ہے ؟

Published on: Apr 16, 2018

جواب # 160432

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:807-676/N=7/1439



اگر کسی مریض کو خون کی واقعی ضرورت ہو خواہ وہ رشتہ دار ہو یا دوست یا عام ضرورت مند مریض، اور جس شخص کا گروپ مریض کے گروپ سے مل رہا ہے وہ صحت مند بھی ہے، یعنی: خون دینے کی صورت میں اسے کوئی غیرمعمولی تکلیف یا پریشانی لاحق ہونے کا اندیشہ نہیں ہے تو ایسی صورت میں مریض کو مفت (بلاعوض) خون دینا یہ ضرورت مند شخص کی ایک بڑی مدد ہے اور جو شخص رضائے الٰہی کے لیے ضرورت مند کو خون دے کر اس کی مدد کرے گا تو حسب نیت ان شاء اللہ اسے ثواب بھی عطا فرمائیں گے۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات