عبادات - حج وعمرہ

Ksa

سوال # 166984

عمرہ کے ارادے سے حرم شریف میں داخل ہونے والا سب سے پہلا عمل کیا کرے گا؟ تحیۃ المسجد کی دو رکعت ادا کرنے کے بعد طواف کرے یا تحیۃ المسجد کے بغیر ہی طواف کرنا شروع کردے؟
دلائل کے ساتھ جواب مرحمت فرمائیں.... اور ذرا جلدی جواب ارسال کردیں... دو دو تین مہینے لگ جاتے ہیں... مرکزیت کا ثبوت پیش کریں...
توصیف ایوبی قاسمی

Published on: Nov 27, 2018

جواب # 166984

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 326-299/M=3/1440



مسجد حرام کا تحیّہ طواف ہے لہٰذا عمرہ کے ارادے سے حرم شریف میں داخل ہونے والا تحیة المسجد نہ پڑھ کر طواف شروع کردے بشرطیکہ فرض نماز یا جماعت وغیرہ فوت ہونے کا خوف نہ ہو۔ فإذا دخل المعتمر مکة، بادر إلی المسجد الحرام، وتوجہ إلی الکعبة المعظمة بغایة الخشوع والاحترام، ویبدأ بالطواف من الحجر الأسود۔ (الموسوعة الفقہیہ: ۳۰/۳۱۷، ط: أشرفی دیوبند) فإذا دخل مکة بدأ بالمسجد الحرام ․․․․․․ ثم ابتدأ بالطواف لأنہ تحیة البیت (شامی) ۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات