عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

India

سوال # 167307

میں نماز میں رفع الیدین کے منسوخ ہونے سے متعلق احادیث جاننا چاہتا ہوں۔
براہ مہربانی یہ بھی بتایں کہ حدیث ضعیف ہے یا مستند براہ مہربانی حدیث کو اردو میں بیان کریں شکریہ

Published on: Dec 31, 2018

جواب # 167307

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 403-381/M=04/1440



ایسی معتبر و مستند کئی روایات ہیں جن سے پتہ چلتا ہے کہ تکبیر تحریمہ کے علاوہ رفع یدین والی روایت منسوخ ہیں۔ چند روایات مع حوالہ یہاں نقل کی جاتی ہیں:



(۱) عن جابر بن سمرة قال خرج رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم فقال: مالي أراکم رافعی أیدیکم کأنہا أذناب خیل شمس، اسکنوا فی الصلاة (مسلم شریف: ۱/۱۸۱) ابودوٴد: ۱/۱۴۳، نسائی: ۱/۱۳۳، ط: اشرفی دیوبند) ۔



(۲) عن علقمة بن عبد اللہ بن مسعود عن النبی صلی اللہ علیہ وسلم أنہ کان یرفع یدیہ في أول تکبیرة ثم لایعود (طحطاوی شریف: ۱/۱۳۲، جدید: ۱/۲۹۰، رقم: ۱۳۱۶) عن علقمة قال: قال عبد اللہ ابن مسعود -رضی اللہ عنہ- ألا أصلي بکم صلاة رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم فصلی فلم یرفع یدیہ إلا في أول مرة (ترمذی: ۱/۵۹) قال أبوعیسی حدیث ابن مسعود حدیث حسن وبہ یقول غیر واحد من أہل العلم من أصحاب النبی والتابعین وہو قول سفیان وأہل الکوفة (ترمذی: ۱/۵۹) ابوداوٴد: ۱۰۹۱) ۔



(۳) عن عاصم بن کلیب الجرمي عن أبیہ قال: رأیت علی بن أبي طالب رفع یدیہ فی التکبیرة الأولی من الصلاة المکتوبة ولم یرفعہا فیما سوی ذلک۔ (موٴطا إمام محمد: ۹۲)۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات