عقائد و ایمانیات - حدیث و سنت

India

سوال # 160524

رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کے اہل خانہ میں سے جب کوئی بیمار ہوتا تھا تو حکم ہوتا کہ اس کیلئے تلبینہ تیار کیا جائے ۔ پھر فرماتے تھے کہ تلبینہ بیمار کے دل سے غم کو اُتار دیتا ہے اور اس کی کمزوری کو یوں اتار دیتا ہے جیسے کہ تم میں سے کوئی اپنے چہرے کو پانی سے دھو کراس سے غلاظت اُتار دیتا ہے ۔'' (ابن ماجہ) *رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے حضرت جبرئیل سے فرمایا کہ: جبرئیل میں تھک جاتا ہوں۔ حضرت جبرئیل نے جواب میں عرض کیا: اے اللہ کے رسول صلی اللہ علیہ وسلم آپ تلبینہ استعمال کریں* آج کی جدید سائینسی تحقیق نے یہ ثابت کیا ہے کہ جو میں دودھ کے مقابلے میں 10 گنا ذیادہ کیلشیئم ہوتا ہے اور پالک سے ذیادہ فولاد موجود ہوتا ہے ، اس میں تمام ضروری وٹامنز بھی پائے جاتے ہیں پریشانی اور تھکن کیلئے بھی تلبینہ کا ارشاد ملتا ہے ۔ *نبی صلی اللہ علیہ وسلم فرماتے کہ یہ مریض کے دل کے جملہ عوارض کا علاج ہے اور دل سے غم کو اُتار دیتا ہے ۔'' (بخاری' مسلم' ترمذی' نسائی' احمد)* جب کوئی نبی صلی اللہ علیہ وسلم سے بھوک کی کمی کی شکایت کرتا تو آپ اسے تلبینہ کھانے کا حکم دیتے اورفرماتے کہ اس خدا کی قسم جس کے قبضہ میں میری جان ہے یہ تمہارے پیٹوں سے غلاظت کو اس طرح اتار دیتا ہے جس طرح کہ تم میں سے کوئی اپنے چہرے کو پانی سے دھو کر صاف کرلیتا ہے ۔نبی پاک صلی اللہ علیہ وسلم کومریض کیلئے تلبینہ سے بہتر کوئی چیز پسند نہ تھی۔ اس میں جَو کے فوائد کے ساتھ ساتھ شہد کی افادیت بھی شامل ہوجاتی تھی۔ مگر وہ اسے نیم گرم کھانے ' بار بار کھانے اور خالی پیٹ کھانے کو زیادہ پسند کرتے تھے ۔ (بھرے پیٹ بھی یعنی ہر وقت ہر عمر کا فرد اس کو استعمال کرسکتا ہے ۔ صحت مند بھی ' مریض بھی) نوٹ: *تلبینہ ناصرف مریضوں کیلئے بلکہ صحت مندوں کیلئے بہت بہترین چیز ہے ۔ بچوں بڑوں بوڑھوں اور گھر بھر کے افراد کیلئے غذا' ٹانک بھی' دوا بھی شفاء بھی اور عطا بھی۔۔۔۔خاص طور پر دل کے مریض ٹینشن' ذہنی امراض' دماغی امراض' معدے ' جگر ' پٹھے اعصاب عورتوں بچوں اور مردوں کے تمام امراض کیلئے انوکھا ٹانک ہے ۔* " جو " -------- جسے انگریزی میں " بارلے " کہتے ہیں - اس کو دودھ کے اندر ڈال دیں ۔ پنتالیس منٹ تک دودھ میں گلنے دیں اور اسکی کھیر سی بنائیں ۔ اس کھیر کے اندر آپ چاھیں تو شھد ڈال دیں یا کھجور ڈال دیں ۔اسے تلبینہ ( Talbeena) کہیں گے --- *ترکیب:* ۔دودھ کو ایک جوش دے کر جو شامل کر لیں۔ ۔ ہلکی آنچ پر ۴۵ منٹ تک پکائیں اور چمچہ چلاتے رہیں۔ جو گل کر دودھ میں مل جائے تو کھجور مسل کر شامل کرلیں ۔ میٹھا کم لگے تو تھوڑا شہد ملا لیں ۔کھیر کی طرح بن جائے گی۔ چولہے سے اتار کر ٹھنڈا کر لیں ۔ اوپر سے بادام ، پستے کاٹ کر چھڑک دیں۔ (کھجور کی جگہ شہد بھی ملا سکتے ہیں) *طبی فوائد:* طبی اعتبار سے اس کے متعدد فوائد بیان کئے جاتے ہیں-یہ غذا: 1۔غم ، (Depression) 2۔ مایوسی، 3۔ کمردرد، 4۔ خون میں ہیموگلوبن کی شدید کمی، 4۔ پڑہنے والے بچوں میں حافظہ کی کمزوری، 5۔ بہوک کی کمی، 6۔ وزن کی کمی، 7۔ کولیسٹرول کی زیادتی، 8۔ ذیابیطس کے مریضوں میں بلڈ شوگر لیول کے اضافہ، 9۔ امراض دل،انتڑیوں، 10۔ معدہ کے ورم، 11۔ السرکینسر، 12۔ قوت مدافعت کی کمی، 13۔ جسمانی کمزوری، 14۔ ذہنی امراض، 15۔ دماغی امراض، 16۔ جگر، 17۔ پٹھے کے اعصاب، 18۔ نڈھالی 19.وسوسے (Obsessions) 20. تشویش (Anxiety) کے علاوہ دیگر بے شمار امراض میں مفید ہے اور یہ بھی اپنی جگہ ایک حقیقت ہے کہ جو میں دودھ سے زیادہ کیلشیم اور پالک سے زیادہ فولاد پایا جاتا ہے اس وجہ سے تلبینہ کی اہمیت بڑھ جاتی ہے ۔
براہ کرم، اس پر روشنی ڈالیں۔

Published on: Apr 26, 2018

جواب # 160524

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:851-103T/B=8/1439



جہانتک احادیث میں بیمار کو تلبینہ کھانے کے بارے میں آیا ہے کہ وہ کمزوری کو دور کرتا ہے اور تکان کو اتارتا ہے اور بیمار کو سکون بخشتا ہے یہ تو بالکل صحیح ہے، اتباع سنت کی نیت سے کھائے تو اور بھی فائدہ ہوتا ہے اس پر مزید روشنی ڈالنے کی ضرورت نہیں، جو ایسی چیز ہے کہ اس کے کھانے سے ہاضمہ بالکل صحیح رہتا ہے اور جب معدہ صحیح رہے گا تو بہت ساری بیماریوں سے آدمی محفوظ رہے گا المعدة رأس کل داء کیونکہ معدہ تمام بیماری کی جڑ ہے، پھر طبی اعتبار سے جن فوائد کی تحقیق کی گئی ہے وہ سب ممکن ہے، استعمال کرکے دیکھیں خود ہی اس کے فوائد سامنے آجائیں گے، چودہ سو سال پہلے رسول پاک صلی اللہ علیہ وسلم نے جو چیزیں بتائی تھیں آج سائنس داں حضرات اس کی تحقیق کرکے حرف بہ حرف اس کی تصدیق کررہے ہیں۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات