India

سوال # 57463

آپ اس مسئلہ کے بارے میں کیا فرماتے ہیں ہمارے گاوٴں میں ایک غیر مسلم کے یہاں غیر اللہ کے نام کا پرساد کھلایا جارہا تھاتو ہمارے یہاں کے بہت سے مسلمانوں یہ پرساد کھایا ہے۔ پرشاد کھانا کس حد تک حرام ہے؟ کیا اس پر کفارہ لاگو ہوتا ہے؟

Published on: Feb 1, 2015

جواب # 57463

بسم الله الرحمن الرحيم

Fatwa ID: 314-312/N=4/1436-U

کسی دیوی، دیوتا یا بت پر چڑھائی ہوئی چیز حرام ہے، اس کا کھانا جائز نہیں، اور اگر کسی نے لاعلمی میں ایسی کوئی چیز کھالی تو اس کا کفارہ یہ ہے کہ اللہ تعالیٰ سے سچی توبہ واستغفار کرے۔ (امداد المفتیین ص۱۴۱، بعنوان: قول مختار، بحوالہ البحر الرائق وغیرہ، فتاوی رشیدیہ ص۴۸۹مطبوعہ پاکستان)

واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات