India

سوال # 171228

اگر کوئی شخص گناہ کرے اور اسے برا اور اللہ کو ناپسند سمجھ کر توبہ کرلے مگر دل میں یہ عقیدہ نہیں کیا ہو کہ آئندہ نہیں کروں گا تو اس کی توبہ قبول ہوگی یا نہیں؟

Published on: Jul 30, 2019

جواب # 171228

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa:901-760/N=11/1440



اگر کسی نے گناہ کو برا اور ناپسند سمجھ کراس سے توبہ کی تو توبہ میں آئندہ وہ گناہ نہ کرنے کا بھی ارادہ ہوگا اگرچہ اُس کا واضح استحضار نہ ہوا ہو ، پس ایسی توبہ قبول ہوگی، پریشان ہونے کی ضرورت نہیں۔ اور اگر دل میں وہ گناہ دوبارہ کرنے کا ارادہ ہے تو یہ توبہ شرعاً توبہ ہی نہیں، پس قابل قبول کیسے ہوگی؟۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات