عقائد و ایمانیات - دعوت و تبلیغ

India

سوال # 167129

اگر نماز کا وقت ہوتا ہے تو میرے آس پاس جو لوگ بھی موجود ہوتے ہیں میں سب سے نماز پڑھنے کو بولتا ہوں اور جو میرے بہت خواص ہیں ان کے ساتھ میں بہت حد تک کوشش کرتا ہوں تو کچھ لوگ مجھے بہت سخت الفاظ بول دیتے ہیں کیا اس صورت میں اگر یہ سب کچھ کفریہ الفاظ بول دیں تو مجھے اس کا گناہ ہوگا ۔اور میں ان کو کس طرح دعوت دوں ۔جبکہ آج کل ہر کوئی نماز سے بچنے کے لئے جھوٹ بولتا ہے کہ میں ناپاک ہوں مگر اکثر یہ ناپاک ہوتے نہیں ۔اور کسی وجہ سے اگر مسجد خانا پڑے تو چلے جاتے ہیں اس وقت اعتراض کرو تو ہنس کر ٹال دے تے ہیں اور کچھ لوگ یہ بھی بول دے تے ہیں کہ کیوں اپنے اوپر گناہ لے رہا ہے ۔

Published on: Nov 27, 2018

جواب # 167129

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 409-290/B=3/1440



شاید آپ سخت الفاظ یا سخت لہجے میں کہتے ہیں اس لئے وہ لوگ آپ کو سخت الفاظ میں بول دیتے ہیں۔ آپ نرمی کے ساتھ اور محبت کے ساتھ کہئے کہ اب نماز کا وقت ہو گیا ہے میں نماز کے لئے جا رہا ہوں اس کے بعد جس کا جی چاہے جائے اور جس کا جی نہ چاہے نہ جائے۔ جہاں ایسے لوگ ہوں وہاں ہاتھ سے تبلیغ کرنایعنی زبردستی پکڑ کے مسجد کے لئے لے جانا مناسب نہیں؛ بلکہ دل میں برا جانے۔ فإن لم یستطع بلسانہ فإن لم تستطع فبقلبہ وذلک أضعف الإیمان ۔ نماز کے لئے کہنے پر جو شخص سخت الفاظ کہے وہ گنہگار ہوگا۔



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات