pakistan

سوال # 166373

بڑی مونچھ رکھنا جائز ہے یا نہیں؟کیا حکم ہے اس کا ؟ اور بڑی مونچھ پر کچھ وعیدیں ہوں تو وہ با حوالہ ترجمہ کے ساتھ بتائیں ، آپ کا احسان ہوگا۔

Published on: Nov 15, 2018

جواب # 166373

بسم الله الرحمن الرحيم


Fatwa : 307-268/H=3/1440



اس طور پر بڑی بڑی مونچھیں رکھنا جس سے غیر مسلموں کے ساتھ مشابہت ہوتی ہو، جائز نہیں۔ من تشبہ بقوم فہو منہم (الحدیث) (رواہ) أبوداوٴد) کہ جو آدمی کسی دوسری قوم کے ساتھ مشابہت اختیار کرے گا، اس کا انجام اسی قوم کے ساتھ ہوگا۔ احادیث مبارکہ میں رسول اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے داڑھی بڑھانے اور مونچھیں تراشنے کا حکم فرمایا ہے، اور مشرکین و یہود کی اس سلسلے میں مخالفت کا بھی حکم فرمایا ہے۔



روی البخاری في صحیحہ عن ابن عمر رضی اللہ عنہما قال قال رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم انہکوا الشوارب واعفوا اللحی ۔ وفي روایة مسلم جزّوا الشوارب وأرخوا اللحی وخالفوا المجوس، وفي روایة الطحاوی لاتشبہوا بالیہود (وجوب ایفاء اللحیة للشیخ زکریا رحمہ اللہ الکاندھلوی، ص: ۱۱)



واللہ تعالیٰ اعلم


دارالافتاء،
دارالعلوم دیوبند

اس موضوع سے متعلق دیگر سوالات